248

پاکستان کو ایک ارب 17 کروڑ ڈالر کی قسط 3 سے 6 ہفتوں میں جاری کردی جائے گی، آئی ایم ایف

عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے کہا ہے کہ پاکستان کے ساتھ اس معاہدے کے نتیجے میں ملک کو فوری ایک ارب 17 کروڑ ڈالر کی رقم مل جائے گی۔ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق آئی ایم ایف کے کمیونیکیشن ڈائریکٹر جیری رائس نے واشنگٹن میں ایک نیوز بریفنگ کے دوران کہا کہ یہ پروگرام کے ساتویں اور آٹھویں مشترکہ جائزے پر ایک معاہدہ ہے، جس کے نتیجے میں کافی حد تک فوری طور پر پاکستان کو ایک ارب 17 کروڑ ڈالر ملیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس سے پروگرام کے تحت پاکستان کو آئی ایم ایف کی جانب سے ملنے والی مجموعی رقم تقریباً 4 ارب 20 کروڑ ڈالر تک پہنچ جائے گی۔

قسط جاری کرنے کے ٹائم فریم کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے آئی ایم ایف کے عہدیدار نے کہا کہ ایگزیکٹو بورڈ کی میٹنگ اب سے 3 سے 6 ہفتوں کے درمیان ہونے کا امکان ہے۔

خیال رہے کہ آئی ایم ایف اور پاکستان نے بدھ کے روز عملے کی سطح پر ایک معاہدہ کیا تھا جس کے تحت قرض دہندہ کو امید ہے کہ ملکی معیشت مستحکم ہوگی اور کرنسی کی قدر میں بہتری آئے گی۔

آئی ایم ایف نے یہ بھی امید ظاہر کی کہ اس سے مہنگائی میں کمی آئے گی اور پاکستان کا سیاسی عدم استحکام ختم ہوگا۔

جیری رائس نے کہا کہ معاہدہ ‘پاکستان کے لیے مزید فنڈنگ کو بھی کھول سکتا ہے، جو حالیہ ہفتوں کے دوران ادائیگیوں کے توازن کے بحران کے دہانے پر پہنچ چکا ہے’۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ یوکرین پر حملے کے بعد توانائی کی قیمتوں میں تیزی سے اضافے اور عمومی طور پر اشیا کی بڑھتی ہوئی قیمتوں نے ملک کو نقصان پہنچایا۔

امریکی اخبار نے نوٹ کیا کہ قرض کے پروگرام کو بحال کرنا اور معیشت کو پٹری پر لانا ‘پاکستان کے نئے وزیر اعظم کے لیے ایک سیاسی لٹمس ٹیسٹ رہا ہے۔’

رپورٹ میں حکومت کے اس خدشے پر بھی روشنی ڈالی گئی کہ آئی ایم ایف کی جانب سے کی گئی اصلاحات ‘عوامی ردعمل کو جنم دے سکتی ہیں جو اگلے عام انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کی کامیابی کے امکانات کو متاثر کر سکتی ہیں۔’

Leave a Reply