72

سندھ: پیر سے رات 8 بجے تک دکانیں کھولنے کی اجازت، دکانداروں کیلئے ویکسینیشن لازمی قرار

سندھ کورونا ٹاسک فورس کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کل بروز پیر (6 جون) سے دکانیں رات 8 بجے تک کھلی رکھنے کی اجازت ہوگی۔

تاہم وزیراعلیٰ سندھ نے تنبیہ کی کہ تمام دکانداروں اور ان کے عملے کو لازمی ویکسینیشن کروانی ہوگی اور 15 روز بعد ان سب کے ویکسینیشن سرٹیفکیٹس چیک کیے جائیں گے۔

صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی سربراہی میں ہوا جس میں رات 12 بجے تک آؤٹ ڈور ڈائننگ کھلی رکھنے کی اجازت بھی دے دی گئی تاہم آؤٹ ڈور ڈائننگ میں لوگوں کے درمیان فاصلہ رکھنا لازمی ہوگا۔

علاوہ ازیں صوبائی حکومت نے ساحل سمندر/سی ویو کھولنے اور ایس او پیز پر عملدرآمد کے ساتھ سیلونز کو بھی رات 8 بجے تک کھولنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے اعلان کیا کہ 2 ہفتوں بعد صوبے میں شادی ہالز کھولنے اور آؤٹ ڈور شادیوں کی اجازت ہوگی۔

صوبائی مشیر قانون مرتضیٰ وہاب نے ٹاسک فورس کے فیصلوں کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ریسٹورنٹس کے لیے ڈائننگ آؤٹ کی اجازت ہوگی جبکہ ریسٹورنٹس کے اندر بیٹھ کر کھانے پر پابندی برقرار رہے گی۔

ساتھ ہی انہوں نے ایس او پیز پر عملدرآمد کرنے اور ماسک پہننے کی اپیل بھی کی۔

تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ

علاوہ ازیں صوبائی ٹاسک فورس نے فیصلہ کیا کہ اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز (ایس او پیز) پر سختی سے عملدرآمد کے ساتھ سندھ میں 7 جون سے ابتدائی تا آٹھویں جماعت تک اسکول بدستور بند رہیں گے جبکہ نویں سے بڑی جماعتوں کے لیے تعلیمی ادارے کھول دیے جائیں گے۔

علاوہ ازیں اس حوالے سے ایک ٹوئٹر پیغام میں تفصیلات بتاتے ہوئے وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا کہ اسکول کے عملے کے لیے ویکسین لگوانا لازمی ہوگی اور تعلیمی ادارے طلبہ کی 50 فیصد حاضری کے ساتھ کھولے جائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں